spot_img
Monday, August 8, 2022
spot_img

-

ہومLatest Newsصرف پیٹرول سبسڈی نہیں کچن سبسڈی بھی

صرف پیٹرول سبسڈی نہیں کچن سبسڈی بھی

- Advertisement -
- Advertisement -

جناب وزیر اعظم شہباز شریف صاحب میں تسلیم کرتا ہوں کہ پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ آپ کی حکومت کی مجبوری تھی کیونکہ عمران خان نے معیشت کو جہاں لا کھڑا کیا ہے وہاں عوام کو ایک لیٹر پیٹرول اور ڈیزل پر 70سے 80روپے سبسڈی دینا کسی حکومت کے بس کی بات نہیں اور پھر یہ سبسڈی قوم کا جمع کیا گیا ٹیکس ہے جسے ایندھن پر خرچ کردینا کوئی عقلمندی نہیں۔ 

جناب وزیر اعظم میں یہ بھی تسلیم کرتا ہوں کہ آپ کی حکومت نے پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ عمران خان کے آئی ایم ایف سے کیے گئے معاہدوں کی روشنی میں کیا جس کے تحت پاکستان کو پیٹرول، گیس، بجلی اور ڈیزل پر دی جانے والی اربوں روپے کی سبسڈی ختم کرنا تھی اور اسی معاہدے کی وجہ سے آئی ایم ایف نے حکومت کو پیسے جاری کئے تھے۔

عمران خان کی حکومت نے عالمی اداروں سے اور مقامی طور پر قرضے تو اتنے لیے کہ 70سالہ تاریخ میں کوئی حکومت اتنا قرضہ نہ لے سکی مگر ان قرضوں سے نہ کوئی نئی موٹروے بنی، نہ بجلی گھر اور نہ کوئی گرین لائن اور اورنج لائن جیسا عوامی منصوبہ تو پھر یہ قرضے کہاں گئے ؟ بات ہورہی تھی کہ پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافے کی تو جناب سیدھی بات یہ ہے کہ ہماری قوم وہ کام خوب کررہی ہے جن کا ہمارے وسائل اجازت نہیں دیتے اوروہ ہے موٹرسائیکل اور گاڑیاں خریدنا وہ بھی سود پر اور بینک سے قرضہ لے کر خصوصی طور پر شہری علاقوں میں 10 سال کا بچہ بھی موٹر سائیکل لیے ہوئے سڑکوں پر ریس لگاتا نظر آتا ہے۔ 

پاکستان کےشہری علاقوں میں ایک محلے سے دوسرے محلے تک جانا ہو تو بھی پیدل چلنا مناسب نہیں سمجھا جاتا، جس کے پاس کار ہے وہ کار اور جس کے پاس موٹر سائیکل ہے وہ موٹر سائیکل استعمال کرتا ہے۔ کہنے کا مطلب یہ ہے کہ غیرترقیاتی کاموں کے لیے ہمارے عوام مو ٹر سائیکل اور کار کا استعمال کرتے ہیں۔ اب اندازہ لگائیں کہ جب آپ دوسرے محلے موٹرسائیکل پر جاتے ہیں تو حکومت آپ کی اس عیاشی پر ایک لیٹر پر 50سے 80 روپے تک سبسڈی دیتی تھی۔ یعنی 150 روپے لیٹر پیٹرول پر 150آپ کی جیب سے جاتا تھا اور ساتھ 50سے 80روپے قومی خزانے سے۔سرکاری افسران کی تو موجیں ہیں۔

 جنہیں ہر ماہ ایک خطیر رقم یا تو پیٹرول کی مد میں ملتی ہے یا پھر 300 سے 500 لیٹر پیٹرول کا کوٹہ ملتا ہے۔ سرکاری افسر اگر دفتر سے 5کلو میٹر دوررہتا ہے تب بھی اس کا کوٹہ اتنا ہی رہتا ہےجبکہ بہت سے سرکاری افسران سرکاری دفاتر کے قریب ہی رہائش پذیر ہوتے ہیں لیکن عیاشی کا عالم یہ ہے کہ انھیں اتنا پیٹرول کا کوٹہ دیا جاتا ہے کہ شام کو اسی سرکاری گاڑی پر ان کے بچے اور بیویاں سڑکوں پر گھومتے پھرتے ہیں، قوم کی جیب سے خریدے گئے اس پیٹرول کوٹے سے عیاشی کرنا کسی سرکاری افسر کو معیوب نہیں لگتا۔ یہی حال وزرا کا ہے جن کے بچے سرکاری گاڑیوں اور پیٹرول پر عیاشی کر رہے ہیں اور قوم بھگت رہی ہے لیکن سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ حکومت پیٹرول کی قیمت کب تک بڑھاتی رہی گی ؟ 

کیوں کہ اگر عالمی منڈی میں قیمتیں 250ڈالر فی بیرل ہوجاتی ہیں اور پاکستان اپنی قوم کو دی جانے والی سبسڈی بھی صفر کردیتا ہے تو کیا اس سے قومی خزانے کو فائدہ ہوگا؟ کیوں کہ قوم تو شاید اس سبسڈی سے محروم ہوجائے مگر وزراء اور سرکاری افسران کو تو کوٹہ ملتا رہے گا اور قوم اس کی قیمت ادا کرتی رہے گی تو کیا قیمتوں میں اضافہ ہی واحد حل ہے؟ قیمتوں میں اضافے کے ساتھ ساتھ ایسے اقدامات ہوتے کیوں نہیں دکھائی دیتے جن سے پیٹرول اور ڈیزل کی کھپت میں کمی لائی جا سکے؟ جس سےپیٹرولیم مصنوعات پر خرچ ہونے والی خطیررقم کو بچایا جا سکے؟ اب سننے میں آرہا کہ شہباز شریف حکومت ٹارگٹڈ پیٹرول سبسڈی کا ارادہ رکھتی ہے یعنی یہ سبسڈی میرے طبقے کے لیے ہوگی جو ایک محلے سے دوسرے محلے تک اپنے دوستوں سے ملنے کیلئےپیدل جانے کے بجائے موٹر سائیکل کا استعمال کرتا ہے۔

اگر یہ ہی رقم آٹا، گھی اور خوردنی تیل کی مد میں غریب کوملے تو اسے کافی ریلیف ملے گا۔پیٹرول اور ڈیزل کی مد میں ٹارگٹڈ سبسڈی کے بجائے، شہری علاقوں میں اچھی اور معیاری ٹرانسپورٹ دی جائے اور سرکاری افسران کو پیٹرول کا اتنا ہی کوٹہ دیا جائے جس سے وہ گھر سے دفتر اور دفتر سے گھر آجا سکیں۔ ٹارگٹڈ سبسڈی اگر دینی ہے تو صرف روز مرہ استعمال کی اشیاپر دیں۔ موٹر سائیکل والے کو تیل سبسڈی سے زیادہ کچن سبسڈی کی ضرورت ہے،حکومت کو چاہئے کہ سائیکل کلچر اور پیدل چلنے کے کلچر کو فروغ دینے کے لیے عملی اقدامات کرے تاکہ قوم کا فضولیات میں لگایا گیا پیسہ بچے اور ساتھ ہی قوم کی صحت بھی بہتر ہو اس سے ہمیں صحت کے شعبے میں سالانہ اربوں روپے بچانے میں بھی مدد ملے گی۔

- Advertisement -

Related articles

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

Stay Connected

6,000مداحپسند
300فالورزفالور
3,061فالورزفالور
400سبسکرائبرزسبسکرائب کریں

Latest posts